Author Topic: ایک مجبوری ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ رخسانہ ناز بلوچ  (Read 1882 times)

0 Members and 1 Guest are viewing this topic.

Offline Shoaib Shadab

  • Academic Scholar & Critic
  • Baluchi Nadkaar بلوچی ندکار
  • ***
  • Posts: 95
  • Karma: 9
  • Balochi Linguist
    • Balochi Linguist
ایک مجبوری
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ رخسانہ ناز بلوچ ۔ کراچی
 ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
 میری روح میں سمانے والے اے نوجوان !
 جب میں گلی کے نکڑ والے
  کلن دکاندار سے ہنس کر بات کرتی ہوں
 تو تم
 جلتے کیوں ہو؟
 جب وہ مسکرامسکرا کر میری طرف دیکھتا ہے
 تو تم تپتے کیوں ہو؟
 تم کیا سمجھتے ہو
 کہ خدانخواستہ میں اس کالے موٹے منحوس سے پیار کرتی ہوں؟
 ہرگز نہیں
 بس ایک مجبوری ہے
 کہ میرا کلن سے ادھار چلتا ہے
XXXXX

Offline hafiz_aaskani1

  • Baask Poet
  • ***
  • Posts: 195
  • Karma: 18

انسانی مجبوری کی باریکیوں کو بہت ہی دلکش انداز میں بیان کیا ہے
يا رب‏!‏ مناهماياني ردء بكن كه ترا دوست انت